More share buttons
اپنے دوستوں کے ساتھ اشتراک کریں

پیغام بھیجیں
logo
. . .
icon تابی لیکس
Latest news
ورلڈکپ کے فیصلہ کن معرکے کیلئے ٹریننگ، میسی نے سالگرہ نہیں منائی ٹی20 میں کوئی ٹیم کمزور نہیں ہوتی، سہ ملکی سیریز آسان نہیں، سرفراز کرکٹ ایشیا کپ ‘ پاکستان اور بھارت کا ٹکراؤ 21 ستمبر کومتوقع پاکستان، متحدہ عرب امارات کرکٹ بورڈز کے درمیان مذاکرات کا کامیاب، معاوضوں میں کمی پر رضامند ی سی بی کے مطابق زمبابوے کے خلاف ون ڈے سیریز کے لیے ٹیم ان کھلاڑیوں پر مشتمل ہوگی۔ کھلاڑیوں میں فخرزمان، امام الحق، محمد حفیظ، شعیب ملک، بابر اعظم، آصف علی، سرفراز احمد، محمد نواز، شاداب خان، جنید خان، فہیم اشرف، محمد عامر، عثمان خان شنواری، یاسر شاہ ، حسن علی اور حارث سہیل شامل ہوں گے ڈوپ ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد احمد شہزاد کو ٹی ٹوئنٹی اسکواڈ سے ڈراپ کردیا گیا۔ ٹی ٹوئنٹی ٹرائی انگیولر سیریز میں فخر زمان، محمد حفیظ، شعیب ملک، آصف علی، حسین طلعت، سرفراز احمد، حارث سہیل، شاداب خان، محمد نواز، فہیم اشرف، محمد عامر، حسن علی اور عثمان شنواری کو شامل کیا گیا ہے۔ سری لنکا سے مقابلے، جنوبی افریقی اسپنر عمران طاہر کو نظر انداز کردیا گیا قومی ہاکی ٹیم نے آسٹریا کیخلاف سیریز 0-2 سے جیت لی

اظہر محمود نے فہیم اشرف کے بارے میں ایسی بات کر دی کہ ۔۔۔۔

اظہر محمود نے فہیم اشرف کے بارے میں ایسی بات کر دی کہ ۔۔۔۔

اظہر محمود نے فہیم اشرف کے بارے میں ایسی بات کر دی کہ ۔۔۔۔

لاہور: بولنگ کوچ اظہر محمود کو فہیم اشرف میں عبدالرزاق کی جھلک نظر آگئی۔اظہر محمود نے کہا کہ فہیم اشرف صلاحیتوں سے مالامال آل راونڈر ہیں، امید ہے کہ وہ عبدالرزاق اور میرے بعد پیدا ہونے والا خلا پر کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے، سری لنکا کے خلاف دوسرے ٹی ٹوئنٹی میں ہیٹ ٹرک اور تیسرے میچ کے آخری اوور میں 2 چھکے ان کے روشن مستقبل کی نوید سنا رہے ہیں۔
سابق اسٹار نے کہاکہ جدید دور کی کرکٹ میں رنز روکنا آسان نہیں رہا،اس لیے وکٹیں لینے والے بولرز کامیاب رہتے ہیں، دائرے کے اندر فیلڈرز اور بھاری بیٹ کی موجودگی میں حریف ٹیم کو بڑا ٹوٹل بنانے سے روکنے کا ایک ہی طریقہ ہے کہ وکٹیں تسلسل سے گرائی جائیں۔ پاکستانی بولرز کی یہ بہت بڑی کامیابی ہے کہ گزشتہ 9 ون ڈے میچز میں سب سے بڑا ٹوٹل 236 ہی بن پایا، خوشی کی بات یہ ہے کہ ریزرو بولرز میں سے بھی جس کو موقع ملا اس نے پرفارم کیا۔
اظہر محمود نے کہا کہ کم انٹرنیشنل کرکٹ کھیلنے کے باوجود پیسرز کی بولنگ میں کاٹ پریکٹس سیشنز میں سخت محنت کا نتیجہ ہے، مثال کے طور پر حسن علی یارکرز اور باونسرز کے ساتھ ”بیک آفی دی ہینڈ“ خاص گیند میں بھی خاصے مشاق ہو چکے اور حریف بیٹسمینوں کو پریشان کرتے ہیں، انھوں نے یہ مہارت حاصل کرنے کیلیے نیٹ پریکٹس میں سخت محنت کی ہے، عثمان شنواری کی سلو بال پر کام کیا گیا، محمد عامر نے بھی ایک نئی قسم کی سلو ڈلیوری میں مہارت حاصل کرلی،اہم بات یہ ہے کہ بولرز تیزی سے یہ ہنر سیکھتے جا رہے ہیں کہ کس طرح کی کنڈیشنز میں بیٹسمینوں کو کیسی گیندیں کرنے سے کامیابی مل سکتی ہے۔
بولنگ کوچ نے کہا کہ 6ماہ قبل بولرز سے کہا تھا کہ محنت کریں تو اپنے کھیل کا انداز بدل سکتے ہیں، میرے لیے بڑے اطمینان کی بات ہے کہ انھوں نے ایسا کر دکھایا۔

adds

اپنی رائے کا اظہار کریں