More share buttons
اپنے دوستوں کے ساتھ اشتراک کریں

پیغام بھیجیں
logo
. . .
icon تابی لیکس
Latest news
دورا انگلینڈ کے لئیے محمد عامر کو ویزہ جاری، پی سی بی محمد عامر کل صبح لاہور علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئرپورٹ سے انگلینڈ روانہ ہوں گے ،پی سی بی ایک روز قبل قومی کرکٹ ٹیم دورا انگلینڈ اور ائیر لینڈ کیلئے روانہ ہو گئی تھی محمد عامر کینٹ بری میں قومی ٹیم کو جوائن کریں گے محمد عامر کا ویزہ تاخیر کا شکار تھا آفریدی اور شعیب ملک آئی سی سی ورلڈ الیون میں شامل ریسلر انعام نے اولمپک گولڈ میڈل کو ہدف بنا لیا پاک- بھارت سیریز کا تنازع، بھارت مضبوط مقدمہ بنانے کا خواہاں ٹیسٹ کرکٹ میں بھی جارحانہ انداز اپنانے کی کوشش کروں گا: فخر زمان اگر میں کپتان ہوتا تو فواد عالم ٹیسٹ ٹیم میں شامل ہوتا، یونس خان کرکٹ بورڈ نے کوچ مکی آرتھر کو سلیکشن معاملات پر لب کشائی سے روک دیا پاکستان ون ڈے کرکٹ کپ 25 اپریل سے اقبال سٹیڈیم فیصل آباد میں شروع ہوگا حکومت ہمارا سالانہ بجٹ دو کروڑ روپے کرے، سیکرٹری جنرل ریسلنگ فیڈریشن سابق کپتان یونس خان ایک مرتبہ پھر پی سی بی سے ناراض ہوگئے

پاک ویسٹ انڈیز ٹی 20سیریز آئندہ سال مارچ میں ہو پائے گی یا نہیں ؟

پاک ویسٹ انڈیز  ٹی 20سیریز آئندہ سال مارچ میں ہو پائے گی یا نہیں ؟

لاہور میں ٹی ٹوئنٹی میچز پر مشتمل پاک ویسٹ انڈیز سریزالتواء کا شکارہو گئی ہے ۔ ذرائع کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ    نے  ویسٹ انڈیز  کرکٹ بورڈ ۔سے رابطہ کیا ہے ، جس میں  پی سی بی کی جانب سے نومبر میں  شیڈول سیریز  آئندہ سال مارچ میں کھیلنے کی پیشکش کی گئی ہے ۔

اان خبروں کے بعد  ویسٹ انڈیزکی میزبانی کے حوالے سے پی سی بی اور شائقین کا جوش ٹھنڈا پڑگیا،آئندہ سال پی ایس ایل کی مصروفیات کے بعد مدعو کرنے پر غور کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق رواں ماہ ویسٹ انڈین ٹیم کی لاہور میں میزبانی کا منصوبہ کھٹائی میں پڑ چکا۔ پی سی بی ذرائع کا کہنا ہے کہ اسموگ کی وجہ سے 3ٹی ٹوئنٹی میچز پر مشتمل سیریز کی امیدوں پر پانی پھر گیا، دوسری طرف کئی کیریبیئن کرکٹرز کی جانب سے تحفظات کا اظہار کیے جانے کے ساتھ پُرکشش معاوضوں پر بنگلہ دیش پریمیئر لیگ میں شرکت کی وجہ سے مہم کمزور پڑنے کا تاثر بھی سامنے آیا۔

اس صورتحال میں پی سی بی کے ایوانوں میں بدستور خاموشی چھائی ہوئی ہے،بورڈ کا کوئی عہدیدار رسمی بیان جاری کرنے کی بھی ضرورت محسوس نہیں کررہا،ذرائع کا کہنا ہے کہ فی الحال اس منصوبے پر کام کرنے کے بجائے فروری میں پی ایس ایل کے بعد موزوں وقت تلاش کیے جانے پر غور ہورہا ہے۔ پاکستانی کرکٹرز کے شیڈول کو دیکھا جائے تو رواں ماہ قومی ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ کے بعد دسمبر میں کوئی مصروفیت نہیں، جنوری میں دورئہ نیوزی لینڈ اور فروری میں پی ایس ایل کا انعقاد ہونا ہے، چھٹی ٹیم متعارف کرائے جانے کی وجہ سے اس بار ایونٹ طویل ہوسکتا ہے۔

اپریل اور مئی میں آئرلینڈ اور انگلینڈ کے ٹورز سے قبل دسمبر اور مارچ میں ہی فارغ وقت موجود ہے،دوسری جانب ویسٹ انڈین ٹیم رواں ماہ نیوزی لینڈ کا دورہ شروع کرے گی جو دسمبر میں بھی جاری رہے گا،یوں گرین شرٹس فارغ ہونے کے باوجود کیریبیئنز کو نہیں بلا سکیں گے،4مارچ سے 10اپریل تک بنگلہ دیش کی ٹیم ویسٹ انڈیز کا دورہ کررہی ہوگی، اس دوران بھی پاکستان فرصت میں کیریبیئنز کی میزبانی نہیں کرسکے گا

adds

اپنی رائے کا اظہار کریں